تازہ تریندلچسپ و حیرت انگیز

ارب پتی افراد کی دولت کی 2022 میں کمی

2022 میں معاشی بحران یکے بعد دیگر ے آئے ۔
یوکرین پر روس کے حملے، مہنگائی کی شرح میں ریکارڈ اضافے اور دنیا بھر میں شرح سود میں اضافے نے عالمی معیشت کو متاثر کیا۔

2022 میں غریت میں اضافہ ہوا۔ لیکن 2022 میں ارب پتی بھی دولت کی کمی سے بچ نہ پائے۔ ۔ یہ کمی تھوڑی بہت نہیں 1400 ارب ڈالرز تک گئی ۔ یہ بھی بتا دیں کہ
کووڈ کی وبا کے دوران دنیا کے امیر ترین افراد کے اثاثوں میں ریکارڈ اضافہ ہوا مگر 2022 میں کمی ہی سامنے آٗئی۔جبکہ کچھ افراد ایسے بھی ہیں جنہوں نے امیری میں نام کمایا۔

بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق ایلون مسک، جیف بیزوس، چینگ پینگ زاؤ اور مارک زکربرگ کے نام متاثرین میں شامل ہیں۔ ان چاروں کے 392 ارب ڈالر کم ہوئے ۔
ایلون مسک ایک سال کے دوران 132 ارب ڈالرز جبکہ جیف بیزوس 85 ارب ڈالرز سے محروم ہوئے۔
مارک زکربرگ کی دولت میں 79.9 ارب ڈالرز کی کمی آئی
کینیڈا کے چینگ پینگ زاؤ کے ہاتھوں سے 89.3 ارب ڈالر نکل گئے ۔
مارک زکربرگ مجموعی طور پر 65 فیصد جبکہ ایلون مسک 51 فیصد دولت گنوا بیٹھے۔

دنیا میں امیر ترین اشخاص میں اس وقت برنارڈ آرنلٹ اس وقت 165 ارب ڈالرز کے ساتھ پہلے نمبر پر ہیں۔
138 ارب ڈالرز کے ساتھ ایلون مسک دوسرے، نمبر پر ہیں۔ 121 ارب ڈالرز کے ساتھ گوتم اڈانی تیسرے نمبر پر براجمان ہیں۔
، 110 ارب ڈالرز کے ساتھ بل گیٹس چوتھی پوزیشن پر ہیں جبکہ 108 ارب ڈالرز کے ساتھ وارن بفٹ 5 ویں نمبر پر موجود ہیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button