پاکستانتازہ ترین

ارشد شریف کے قتل پر جے آئی ٹی تشکیل دی جائے گی. رانا ثنا اللہ

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا ہے خرم، وقار اور طارق وسیع ارشد قتل کیس کے ملزم ہیں، صحافی ارشد شریف کے قتل پر جے آئی ٹی تشکیل دی جائے گی جس میں پولیس کے علاوہ تمام ایجنسیوں کے افراد شامل ہوں گے۔
نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا ارشد شریف کی میت آنےکے بعد تفتیش شروع ہوئی، دفعہ 174 ضابطہ فوجداری کے تحت اسلام آباد پولیس تفتیش کر رہی تھی، اس کے ساتھ فیکٹ فائنڈنگ ٹیم کیس کی تحقیقات کر رہی تھی جس میں اس کی رپورٹ سپریم کورٹ جمع کرائی جا رہی ہے جب کہ سپریم کورٹ کی انسانی حقوق کمیٹی بھی انکوائری کر رہی تھی۔

انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے آج مقدمہ درج کرنے کی اجازت دی، فیکٹ فائنڈنگ رپورٹ مقدمے کا حصہ بن جائے گی، ہمیں انتظار تھا کہ چیف جسٹس آف پاکستان آج ہی کمیشن آف انکوائری تشکیل دیں گے، اس متعلق وزیراعظم نے بھی انہیں درخواست بیجھی تھی۔ اب ایف آئی آر درج ہوگئی ہے، فیکٹ فائنڈنگ رپورٹ اس کا حصہ ہوگی اور اس کے اوپر جے آئی ٹی تشکیل دی جائے گی جو کہ اس کیس میں اپنی تحقیقات کا آغاز کرے گی۔

فیکٹ فائنڈنگ ٹیم کا ماننا ہے کہ خرم، وقار اور طارق وسیع کیس میں ملزم ہیںفیکٹ فائنڈنگ ٹیم نے ملزمان سے رابطہ کیا تھا، ان کا ماننا ہے کہ اگریہ قتل ہے تو خرم اور وقار کیس میں ملزم ہیں اور آگے جاکر بھی ثابت ہوں گے جب کہ کینیامیں موجودگی ارشد شریف کے قتل کی وجہ بنی، طارق وسیع نے وقا راحمد سے رابطہ کر کے ویزا جاری کرایا اور طارق وسیع کے تعاون سے ہی مرحوم کینیا پہنچے تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جیسے جیسے شواہد سامنے آئیں گے تو ہم ان تین لوگوں کو شامل تفتیش کریں گے، جے آئی ٹی میں پولیس کے علاوہ تمام ایجنسیوں کے لوگ شامل ہوں گے جن کے پاس کسی غیر ملکی ایجنسی یا فارم کو معاملے میں شامل کرنے کا اختیار ہوگا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button