تازہ ترینکھیل

اب گیند کو تھوک نہیں لگایا جا سکے گا. نئے رولز لاگو ہو گئے

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کے نئے قوانین یکم اکتوبر 2022 سے لاگو کر دیے گئے تمام انٹرنیشنل میچز ان قوانین کے تحت کھیلے جائیں گے , ٹی 20 ورلڈ کپ 2022 میں بھی یہ قوانین لاگو ہوں گے ۔

نئے قوانین کے تحت گیند کو تھوک لگانے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے ۔ کورونا وباء کے باعث گیند پر تھوک لگانے کی عارضی پابندی لگائی گئی تھی جسے اب مستقل کر دیا گیا ہے ، باؤلرز گیند کو چمکانے کیلئے پسینے کا استعمال کر سکیں گے ۔ اب کیچ آؤٹ کی صورت میں "رننگ” نہیں ہوگی بلکہ نان سٹرائیکر کو واپس امپائر کی جانب کریز میں واپس جانا ہوگا جبکہ کیچ آؤٹ ہونے پر آنیوالا نیا کھلاڑی ہی باؤلر کا سامنا کرے گا ۔ اس سے قبل کیچ آؤٹ کے دوران رننگ میں دونوں بلے باز ایک دوسرے کو کراس کر لیتے تھے تو نیا آنیوالا بلے باز امپائر کی جانب کریز میں آکر کھڑا ہوتا تھا۔
نئے قوانین کے تحت اب نئے بیٹر کوپہلی گیند کا سامنا 2 منٹ کے اندر اندر کرنا ہوگا جبکہ ٹی 20 میچز میں یہ دورانیہ 90 سیکنڈ برقرار رکھ اگیا ہے ، اس سے قبل نئے بیٹر کو گیند کا سامنا کرنے کیلئے 3 منٹ کا وقت دیا جاتا تھا، اب مقررہ وقت تک بلے باز کے وکٹ پر نہ پہنچنے پر فیلڈنگ ٹیم کا کپتان ٹائم آؤٹ کی اپیل کر سکے گا۔

نئے قوانین کے تحت باؤلر کو پابند کیا گیاہے کہ وہ بلے باز کو پچ کی حدود میں ہی گیند پھینکے ، اب باؤلر کو پچ چھوڑنے پر مجبور کرنے کی صورت میں امپائر ڈیڈ بال کے ساتھ ایسی گیند کو نو بال قرار دینے کا بھی مجاز ہے ۔
نئے قوانین کے مطابق اب فیلڈنگ سائیڈ کی جانب سے کوئی نامناسب حرکت کی گئی تو امپائر نہ صرف گیند کو ڈیڈ بال قرار دے سکتا ہے بلکہ بطور پنلٹی 5 رنز بلے بازی کرنے والے ٹیم کو بھی دے سکتا ہے ۔

نئے قوانین کی تحت منکڈ رن آؤٹ کو اب اخلاقی قرار دیدیا گیا ہے ، منکڈ کی اصطلاح انڈین باؤلر وینو منکڈ سے منسوب ہے، وہ پہلے کھلاڑی تھے جنہوں نے 1948 میں آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ میچ میں نان سٹرائیکر کو کریز چھوڑنے پر رن آؤٹ کیا تھا ، منکڈ رن آؤٹ کے تحت نان سٹرائیکر آؤٹ تو ہو جاتا تھا مگر سپورٹس سپرٹ رکھنے والے منکڈ کو ہمیشہ غیر اخلاقی رن آؤٹ کا درجہ دیتے تھے مگر اب آئی سی سی کے نئے قوانین میں اسے اخلاقی رن آؤٹ کا درجہ دیدیا گیا ہے ۔

باؤلر کی جانبس ے سٹرائیکر کے کریز سےنکلنے کی صورت میں رن آؤٹ کرنے کیلئے تھرو کو ختم کر دیا گیا ہے ، قبل ازیں باؤلر گیند کرانے سے قبل سٹرائیکر کے کریز سے نکلنے کی صورت میں رن آؤٹ کرنے کیلئے تھرو کر سکتا تھا ، مگر نئے قوانین کے تحت اب یہ ڈیڈ بال شمار کی جائے گی ۔

ان میچ پینلٹی کو 2023 کے ورلڈ کپ سپر لیگ کے بعد ون ڈے انٹر نیشنل میں بھی لاگو کر دیا جائے گا۔ یہ رول ایشیاء کپ 2022 میں بھی لاگو تھا جہاں بھارت اور پاکستان کے مابین کھیلے گئے دوسرے میچ کے دوران سلو اوور ری پر قانون کے اطلاق کی مثال دیکھنے میں آئی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
%d bloggers like this: