پاکستانتازہ ترین

عمران خان، شاہ محمود قریشی، اسد عمر کے درمیان امریکی سائفر سے متعلق گفتگو کا دوسرا حصہ بھی لیک

سابق وزیراعظم عمران خان، سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور اسد عمر کے درمیان امریکی سائفر سے متعلق گفتگو کا دوسرا حصہ بھی لیک ہوگیا
اس مبینہ آڈیو لیک میں اس وقت کے وزیراعظم عمران خان،اس وقت کے وزیرخارجہ شاہ محمود قريشی کو مختلف ہدايات دے رہے ہيں۔

عمران خان کو کہتے سنا جاسکتا ہے کہ شاہ جی، ہم تينوں نے کل ايک ميٹنگ کرنی ہے۔ اس میٹنگ سے مراد عمران خان کی یہ تھی کہ میٹنگ میں عمران خان اور شاہ محمود قریشی کے علاوہ فارن سیکریٹری بھی موجود ہوتے)۔

انھوں نے کہا کہ اس میں ہم نے کہنا ہے کہ وہ لیٹر جو ہے نہ اس کے چپ کرکے مرضی کے منٹس لکھ دے۔ عمران خان کو کہتے سنا جاسکتا ہے کہ اعظم (پرنسپل سیکریٹری) کہہ رہا ہے کہ اس کے منٹس بنالیتے ہیں،اس کو فوٹو اسٹیٹ کرکے رکھ لیتے ہیں۔


آڈیولیک میں اعظم خان کی آواز بھی سنائی دی گئی جس میں وہ سوال کررہے ہیں کہ یہ سائفر 8 ، 9 کو آیا ہے۔ اس پر کوئی کہتا ہے کہ 8 کو آیا ہے۔

عمران خان کی آواز آتی ہے کہ لیکن میٹنگ 7 کو ہوئی ہے،ہم نے تو امریکنز کا نام لینا ہی نہیں ہے،کسی صورت بھی۔

انھوں نے مزید بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ لیکن ایشو یہ ہے کہ پلیز کسی کے منہ سے ملک کا نام نہ نکلے،یہ بہت امپورٹنٹ ہے آپ سب کے لیے۔۔ انھوں نے یہ بھ کہا کہ کس ملک سے لیٹر آیا ہے،میں کسی کہ منہ سے اس کا نام نہیں سننا چاہتا۔

اسد عمر کی آواز بھی ایک آڈیو لیک میں موجود ہے۔ اسد عمر کو عمران خان سے سوال کرتے سنا گیا ہے۔ وہ کہہ رہے ہیں کہ آپ جان کر لیٹر کہہ رہے ہیں؟یہ لیٹر نہیں،میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے۔

عمران خان کو بھی کہتے سنا گیا کہ وہی ہے نہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے،ٹرانسکرپٹ یا لیٹرایک ہی چیز ہے،لوگوں کو ٹرانسکرپٹ کی تونہیں سمجھ آنی تھی نہ،آپ پبلک جلسے میں ایسے ہی کہتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
%d bloggers like this: