پاکستانتازہ ترین

یقین دلاتا ہوں انتخابی عمل مکمل صاف، شفاف اور آزادانہ ہوگا، انوارالحق کاکڑ

نگران وزیراعظم انوارالحق کاکڑ نے کہاہے کہ چیئرمین پی ٹی آئی امریکا پر سازش کے بیانیے سے خود ہی پیچھے ہٹ گئے،بعض اوقات سیاستدان عوامی حمایت حاصل کرنے کیلئے ایسا موقف اپنا لیتے ہیں۔

غیرملکی میڈیا ٹی آر ٹی کو انٹرویو دیتے ہوئے نگران وزیراعظم نے کہاکہ ہم جلد انتخابی عمل میں داخل ہونے جارہے ہیں،یقین دلاتا ہوں انتخابی عمل مکمل صاف، شفاف اور آزادانہ ہوگا، انتخابی حلقہ بندیاں آئینی ضرورت ہیں،انتخابی حلقہ بندیوں پر اعتراض قانون سازی کے وقت کیا جا سکتا تھا،ان کا کہناتھا کہ انتظامی سطح پر کسی خاص گروپ کی حمایت یا مخالفت نہیں کی جائے گی،الیکشن کمیشن غیرآئینی کام نہیں کرےگا، ہم نے قانون اور آئین کے مطابق عمل کرنا ہے، انوارالحق کاکڑ نے کہاکہ جمہوریت میں پرامن احتجاج ہر شہری کا بنیادی حق ہوتا ہے،تشدد آمیز مظاہروں کی کسی صورت اجازت نہیں دی جا سکتی،ہر سیاسی جماعت کے حق کا تحفظ کریں گے۔

نگران وزیراعظم نے کہاکہ چیئرمین پی ٹی آئی امریکا پر سازش کے بیانیے سے خود ہی پیچھے ہٹ گئے،بعض اوقات سیاستدان عوامی حمایت حاصل کرنے کیلئے ایسا موقف اپنا لیتے ہیں،یقینی بنائیں گے کوئی بھی بیرونی طاقت پاکستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہ کرے،ان کا کہنا تھا کہ پاکستان آزاد اور خودمختار ملک، ہم اپنے قومی مفاد میں فیصلے کرتے ہیں،پہلی بار کسی بھی وزیراعظم کو آئینی طریقے سے اقتدار سے الگ کیا گیا،آئین میں حکومت کی تشکیل اور ہٹائے جانے کا طریقہ درج ہے،انوار الحق کاکڑ نے کہاکہ فوج کے کردار کو حکومت کے تحت دیکھتے ہیں،فوج ایک منظم ادارہ، مجبوراً مختلف امور میں مدد لینا پڑتی ہے،ہمیں اپنے سویلین اداروں کی استعداد کار بڑھانے کی ضرورت ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے