کالم

پروا کی پرواز اور پروان

منشا قاضی

پی آر اوز ویلفئیر ایسوسی ایشن کے عہدیدارن کے اعزاز میں ہمدرد فاؤنڈیشن کی سربراہ محترمہ سعدیہ راشد نے پرشکوہ عشائیہ کا اہتمام کیا جس میں سید علی بخاری کی سعادت مندی قلب روح کی فتح مندیوں کا سبب قرار پائی ۔ حقیقت یہ ہے کہ بخاری صاحب نے اپنےیوٹیوب چینل پر پوری منظر کشی اپنے حسن بیان سے کی ۔ آج حکیم سعید شہید زندہ ہوتے اور وہ یہ کارروائی سنتے تو میں پورے وثوق سے کہہ سکتا ہوں کہ وہ گراں قدر انعام سے نوازتے اب بھی ان کی دعاؤں کا ثمر بخاری صاحب کی صورت میں ہمارے سامنے ہے ۔ بخاری صاحب اب بڑی سے بڑی پرشکوہ تقریب کی منظر کشی کر سکتے ہیں ۔مجھے اس زبان دانی کے عقب میں مسلسل ریاضت کارفرما نظر آتی ہے ۔ اور حکیم محمد سعید شہید کا فیض اور ہمدرد کی درد مند دختر ہمدرد محترمہ سعدیہ راشد کی تربیت کے اثرات بدرجہ اتم دکھائی دیتے ہیں ۔ میں چیئرمین جناب سید ندیم الحسن گیلانی ۔ صدر اطہر حسن اعوان ۔ سیکرٹری جنرل میاں کرامت علی ۔ سیکرٹری اطلاعات علی نواز ۔ سیکرٹری فنانس چوہدری ذوالفقار احمد ۔ افتخار رسول اور عابد سعید کو مبارک باد پیش کرتا ہوں کہ پروا کے سچے اور حقیقی ترجمان کی جان شائستہ گفتگو میں پنہاں ہے ۔۔۔ میں نے خود ادب سید علی بخاری صاحب کی سرگرمیوں کی تپش سے سیکھا ہے ۔ میرے اس سلسلے میں استاد بھی ہیں ۔ میری تمام پروا کے اراکین سے استدعا ہے کہ وہ کھلے دل سے ایک دوسرے کا احترام کریں ۔عابد سعید تعلقات عامہ کے امام ہیں ۔افتخار رسول تو ابلاغ کے بے لاگ استاد ہیں ۔ ہمارے آئی ٹی کی دنیا کے بے تاج باد شاہ سید علی رضا کے تجربات کی روشنی بھی ہمیں درکار ہے ۔ ان کا جذبہ اور انسانی فلاح کا دائرہ لا محدود ہے ۔ شعیب ھاشمی کی خدمات کا
اعتراف کیا جانا ضروری ہے ۔ میری مؤدبانہ التماس ھے کہ حکیم محمد سعید شہید کی روح کو خوش رکھنے کے لیئے پروا کا مثالی کردار پوری دنیا میں ایک مثبت پیغام بنایا جائے پروا بہبود کلب کا قیام عمل میں آ چکا ہے ۔ ہمیں اصل نصب العین سے نہیں ہٹنا چاہیئے ۔پروا کا ہر فرد ایک پورا ادارہ ہے اور اپنی ذات میں انجمن ہے ۔۔ پاکستان کے تمام سرکاری اہلکاروں سے اگر ممتاز شخصیات ہیں جن کے قرطاس اعزاز پر مصنف ۔ شاعر ۔ مؤرخ ۔ کالم نگار اور محقق کے القابات ثبت ہیں تو وہ پروا کے اراکین ہی تو ہیں ۔ سید علی بخاری ایک ایسے ادارے سے وابستہ ہیں جہاں ملک کی نامور شخصیات کو آپ کی چشم بیں نے دیکھا ہے ۔ برداشت کا درس میں نے سید ندیم الحسن گیلانی سے حاصل کیا ہے ۔۔ بردباری عابد سعید اور دوراندیشی اطہر حسن اعوان سے سیکھی ہے ۔ ۔ پروفیسر رفرف اور سید علی رضا خوش نظری اور احترام کے سزاوار ہیں۔ ۔ مہر صاحب پر سب کا حق ہے ۔ سید اعجاز شاہ کے اندر بہار موجود ہے ۔ ہم سب کی ایک ہی آرزو ہے کہ پروا کی آبرو بڑھے اور بخاری صاحب کی جستجو میں اضافہ ہو ۔ چغتائی کا مقصود بھی زمانے کی سیر سے آگے نکل گیا ۔ ہمارے عثمان غنی جو بالکل نہیں بولتے وہ بھی بڑے کام کے انسان ہیں ۔ میاں کرامت علی اور علی نواز دونوں میں گہری ہم آہنگی موجود ہے ۔ کامران صاحب پروا کو پروان دیکھنا چاہتے ہیں ۔ احمد میاں کی پروا سے محبت عشق کی حدود سے آگے ہے ۔ اس لیئے آؤ پروا کو پروان چڑھانے کے لیئے جس طرح گیلانی صاحب نے خون جگر دیا ہے ۔ ہم بھی اس کی تقلید کریں ۔ پروا یوٹیوب چینل کی آزمائشی نشریات کا آغاز اب تک ہو جانا چاہئے تھا ۔ اور میں سمجھتا ہوں سید علی بخاری اس پر کام کر رہے ہوں گے ۔
اگر ہمارے نصیبوں میں نو بہار نہیں
آؤ چمن پرستو خزاں ہی کو ساز گار کریں
ہمدرد شوریٰ کے معزز اراکین میں بریگیڈئر سعید اختر ۔ رانا امیر علی خان ۔ الامین اکیڈمی کے سربراہ پروفیسر عبدالرزاق نقشبندی ہیں ۔ محترمہ سمیعہ قاضی ۔ محترمہ خالدہ جمیل ۔ پروفیسر خالد ۔ طالب بھٹو اور کاشف جاودانی کے والد گرامی کی جوانی کے روشن ایام میری نظروں کے سامنے گھوم گئے۔ پاک ترک دوستی کا یہ پیکر متحرک جدید عہد کے ابلاغی ویپنز پر پوری قدرت رکھتا ہے ۔پرتکلف عشائیہ اور پرشکوہ ماحول کا اختتام اس وقت ہوا جب لیلہ ء زلف شب دراز تا حد کمر جا رہی تھی ۔ محترمہ سعدیہ راشد کا مکرر شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Diyarbakır koltuk yıkama hindi sex