پاکستان

قومی اسمبلی میں مندر پر حملے کیخلاف قرارداد متفقہ طور پر منظور

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں رحیم یارخان میں مندر پر حملے کے خلاف قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی۔ اس سلسلے میں قومی اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری کی صدارت میں ہوا جس میں وزیر مملکت علی محمد خان نے مندر پر ہونے والے حملے کے خلاف قرارداد پیش کی جس کو متفقہ طور پر منظور کرلیا گیا۔
اجلاس کے دوران مولانا اکبر چترالی، مولانا جمال الدین، سید نوید، مہناز اکبر، مرتضی جاوید عباسی، محسن داوڑ نے واقعہ کی بھرپور مذمت کی جب کہ شیریں مزاری نے کہا کہ ایف آئی آر کٹ گئی ہے اور وزیراعظم نے نوٹس بھی لیا ہے، حکومت ایکشن لے رہی ہے لہذا اس حوالے سے سیاست نہ کی جائے۔
ہندو اراکین اسمبلی کی جانب سے رحیم یارخان میں مندر پر حملے کا معاملہ اٹھاتے ہوئے کہا گیا کہ گنیش مندر کو نذر آتش کیا گیا جو ہندو برادری کے ساتھ بہت بڑی زیادتی ہے، پاکستان کا آئین اقلیتوں کو مکمل آزادی اور برابری کے حقوق دیتا ہے تاہم اس واقعہ اس کی مذمت کرتے ہیں، معاملہ کی انکوائری کروائی جائے جب کہ ابھی تک کوئی گرفتاری بھی عمل میں نہیں آئی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے