کالم

’’عید الاضحٰی‘‘اور ہماری ذمہ داریاں

فاطمہ ارشد

عید الاضحٰی اسلامی تقویم کے مہینے ذو الحجہ کی دسویں تاریخ کو منائی جاتی ہے۔ یہ ایک اہم اسلامی تہوار ہے جسے پاکستان سمیت دنیا بھر میں مسلمان خوشی سے مناتے ہیں۔ اس تہوارپر مسلمان اللہ تعالیٰ کی رضا اور خوشنودی کی خاطر جانوروں کی قربانی کرتے ہیں ۔ عید کے دن صبح سویرے لوگ مساجد میں نماز عید پڑھتے ہیں۔ پھر احکامات خداوندی کے تحت قربانی کی جاتی ہے۔ اس کے بعد لوگ گوشت کو اپنے رشتہ داروں اور غرباء میں تقسیم کرتے ہیں۔ عید الاضحی کا مقصد دینی اور اسلامی تعلقات کو مضبوط بنانا ہے۔ یہ تہوار ہمیں ایک دوسرے کی فلاح و بہبود اور خدمت کرنے کی ترغیب دیتا ہے۔ یہ تہوار مسلمانوں کو ابراہیمؑ کی تابعداری، توحید اور خدا پر اعتماد کی یاد دلاتا ہے۔ لوگ اسے خاندان اور دوستوں کے ساتھ مناتے ہیں اور احساسِ قربانی کا تجربہ کرتے ہیں۔ حکومت کو چاہیے:کہ قربانی پر حکومت کو قربانی کے لئے مخصوص جگہیں، منظم جماعتوں، وٹرینری سروسز، صحت کی تشریعات وغیرہ فراہم کرنی چاہئیں تاکہ قربانی کا عمل آسانی سے اور اصول کے مطابق ہو سکے۔حکومت کو عید الأضحی کے دوران امن و امان کی فراہمی کرنی چاہئیے۔اس تہوار پر حکومت کو بجلی، پانی، ٹرانسپورٹ، صحت کی خدمات، ریسکیو کے سرپرستوں کی فراہمی، سوشل ورکرز کی موجودگی، موٹروے اور چوکوں کی صفائی، عوامی ٹوائلٹس کی تنظیم، امدادی خدمات وغیرہ کا انتظام کرنا چاہئیے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Diyarbakır koltuk yıkama hindi sex