بین الاقوامی

بھارت میں پٹرول کا بحران، پہیہ چلنا مشکل، لوگ رل گئے

آسام:بھارت میں پٹرول بحران نے شدت اختیار کرلی.کارسوار، موٹرسائیکل سوار، سکوٹر سوار حکومتی پالیسی کی وجہ سے رل گئے .تفصیلات کے مطابق میزورم کے ساتھ سرحدی تنازعہ کی وجہ سے ایندھن لے جانے والے ٹینکروں کی آمدورفت بند ہو چکی ہے۔ صوبائی حکومت نے صورتحال کے پیش نظر موٹر سائیکل کیلئے پانچ لیٹر اور کاروں کے لئے صرف 10 لیٹر ایندھن کی منظوری دی ہے۔
میزورم حکومت نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ سبھی فلنگ اسٹیشنوں کو حکم دیا جاتا ہے کہ وہ کسی گاڑی کے لئے مقررہ مقدار سے زیادہ پٹرول اور ڈیژل نہیں دیں۔ صرف ان گاڑیوں کے لئے ایندھن جاری کیا جائے گا جو فلنگ اسٹیشنوں پر جاتے ہیں۔ 6، 8 اور 12 پہیہ والی گاڑیوں جیسے بھاری موٹر گاڑیوں کے ذریعہ ایک بار میں خریدے جاسکنے والے ایندھن کی مقدار 50 لیٹر اور متوسط موٹر گاڑیوں جیسے پک اپ ٹرکوں کے لئے 20 لیٹر تک محدود کر دی گئی ہے۔
ریاستی حکومت کے حکم میں کہا گیا کہ اسکوٹر کے لئے زیادہ سے زیادہ تین لیٹر، دیگر دو پہیہ گاڑیوں کے لئے پانچ لیٹر اور کاروں کے لئے 10 لیٹر ایندھن کی منظوری ہے۔ اس میں کہا گیا کہ چاول کے بورے، تیل اور رسوئی گیس لے جانے والے ٹرکوں کو اتنے ایندھن لینے کی منظوری ہوگی، جو ریاست میں آنے اور ریاست سے باہر نکلنے کے سفر کے لئے مناسب ہوگی۔ فلنگ اسٹیشنوں سے کنٹینر یا گیلن بیرل میں ایندھن لینے پر سخت پابندی لگائی گئی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *