کالم

اساتذہ کا عالمی دن۔۔ وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی کی دلچسپی

محمد ناظم الدین

صوبہ بھر میں اساتذہ کا عالمی دن قوم کے معماروں کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے منایا جاتا ہے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی کی ہدایت پر سرکاری سطح پر سکولوں، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں بے شمار تقریبات کا اہتمام کیا گیا ہے۔ اس دن کی مناسبت سے منعقدہ پروگراموں میں سیمینارز اور کانفرنسیں منعقد کی گئیں۔ قوم اس یوم اساتذہ پر تمام معزز اساتذہ ان کی محنت اور بچوں کے لیے لگن بھلائی نہیں جا سکتی۔اساتذہ کا فرض ہے کہ بچوں کو پیار اور دیکھ بھال کے ساتھ سنبھالیں۔ آپ قوم کے معمار ہیں۔ پاکستان کا مستقبل اساتذہ کرام کے ہاتھوں میں ہے۔پاکستان سمیت عالمی سطح پر یوم اساتذہ ہر سال 5 اکتوبر کو منایا جاتا ہے۔ یہ 1966 ء میں اساتذہ کی حیثیت سے متعلق ILO/UNESCO کی سفارشات کو اپنانے کی سالگرہ کی یاد میں منایا جاتا ہے، جو اساتذہ کے حقوق اور ذمہ داریوں، اور ان کی ابتدائی تیاری اور مزید تعلیم، بھرتی، ملازمت، اور تدریس اور سیکھنے کے حالات کے معیارات کا تعین کرتا ہے۔.پاکستان میں یوم اساتذہ انکے اہم کردار کا اعتراف بھی ہے۔اساتذہ کو معاشرے کی ریڑھ کی ہڈی کے طور پر جانا جاتا ہے جو طلباء کے کیریئر کو تشکیل دینے اور انہیں ملک کا کامیاب شہری بننے میں مدد دینے کے لئے اپنی تمام تر کوششیں لگاتے ہیں۔
حقیقی زندگی میں، ہم اپنے والدین سے زیادہ اپنے اساتذہ کے مقروض ہوتے ہیں کیونکہ وہ طلبہ کے دل کو جگانے اور اسے تعلیم و علم سے روشن کرنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ اسکول اپنے ابتدائی اور متاثر کن سالوں میں، اساتذہ نے ان پر بہت اثر ڈالا ہے۔ اساتذہ کرام کوہمیں سال بھر یاد رکھنا چاہئے کہ وہ ہمارے مستقبل کی تشکیل میں مثبت کردار ادا کرتے ہیں۔ استاد ایک ایسا دوست، فلسفی اور رہنما ہوتا ہے جو ہمارا ہاتھ پکڑتا ہے، ہمارے ذہن کو کھولتا ہے۔نگراں وزیراعلیٰ پنجاب محسن نقوی صوبہ بھر میں تعلیمی سرگرمیوں کو فروغ دینے اور تعلیم کو وقت حاضر کے مطابق ڈھالنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔انہوں نے تعلیمی نظام کو ایک نیا رخ دے کر ثابت کر دیا ہے کہ ہمیں اپنے فرسودہ تعلیمی نظام میں تبدیلی لا کر قوم کے معماروں کو ترقی یافتہ ملکوں کی فہرست میں لا کر ملک و قوم کو عروج دلوانا ہو گا۔اس سلسلہ میں انہوں نے اساتذہ کرام کو پابند کیا ہے کہ وہ اپنی بھر پور توجہ سے قوم اور مستقبل کے معماروں کوہر سطح پر فوقیت دیں۔انہوں نے کہا ہے ایسے اساتذہ کرام کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے گا جو اپنے فرائض سے کوتاہی کے مرتکب ہو رہے ہیں۔
سپیشل بچے خاص الخاص ہوتے ہیں او رمجھے ان سے قلبی لگاؤ ہے۔حال ہی میں ہونے والی خصوصی بچوں کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نےکہا کہ اعلیٰ تعلیمی اور غیر نصابی کارکردگی کی بنیاد پر اعزازات حاصل کرنے والے تمام بچوں اور ان کے والدین کو دلی مبارکباد دیتا ہوں۔یہ بات ہم سب کے لئے باعث اطمینان ہے کہ ان سپیشل بچوں کو معاشرے کا فعال شہری بنانے کے لئے محکمہ سپیشل ایجوکیشن نے یونیسف(UNICEF) اورگلوبل پارٹنر شپ فارایجوکیشن (GPE) کے تعاون سے ہیلتھ سکریننگ پروگرام فارسپیشل سٹوڈنٹ شروع کیاہے، جس کے تحت پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کیئر ڈیپارٹمنٹ کے طبی ماہرین کے ذریعے خصوصی بچوں کی ہیلتھ سکریننگ کی گئی۔ محکمہ سپیشل ایجوکیشن کی تاریخ میں پہلی دفعہ ان بچوں کو یونیسف (UNICEF) اورگلوبل پارٹنر شپ فارایجوکیشن(GPE) کے تعاون سے معاون آلات مہیا کئے جارہے ہیں۔یہ معاون آلات ان بچوں کی روزمرہ زندگی کے متفرق معاملات میں معاون و مدد گار ثابت ہوں گے بلکہ ان کی انفرادی شخصیت اور خود اعتمادی میں مثبت تبدیلیاں اور بہتری لائیں گے۔”تعلیم سب کے لئے“ کے تحت تمام آؤٹ آف سکول خصوصی بچوں کے لئے انرولمنٹ ڈرائیو شروع کی گئی ہے اور ایک ہزار سے زائد آؤٹ آف سکول بچوں کو سپیشل ایجوکیشن کے اداروں میں داخلے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ اللہ سے دعا ہے کہ محکمہ سپیشل ایجوکیشن اس ہدف کی تکمیل میں کامیابی سے ہمکنار ہو۔اللہ تعالیٰ ہمیں اپنے نیک مقصد میں کامیابی سے ہمکنار کرے۔
نگراں وزیراعلیٰ پنجاب محسن نقوی کو خصوصی تعلیمی داخلہ مہم کےدوران، ابراہیم نامی ایک باصلاحیت نوجوان آرٹسٹ، جو ایک خصوصی بچہ ہے، نے وزیر اعلیٰ نقوی کو ہاتھ سے تیار کردہ ایک دلکشپورٹریٹ پیش کیا۔ وزیر اعلیٰ بظاہر خوش ہوئے اور فن پارے کی تعریف کی۔ وزیر اعلیٰ نقوی نے تحفے میں آنے والے فنکار کو ذاتی طور پر اپنی جیب سے 50 ہزار روپے کی رقم سے نوازا۔تقریب میں ایک دل کو چھونے والی جہت کا اضافہ کرتے ہوئے، خصوصی تعلیم کے طلباء نے اشاروں کی زبان میں قومی ترانہ پیش کیا۔ وزیر اعلیٰ نقوی کی تقریر کا ترجمہ بھی اشارے کی زبان میں فصاحت کے ساتھ پیش کیا گیا، جس میں شمولیت اور سمجھ بوجھ کو فروغ دیا گیا۔
مزید برآں، وزیر اعلیٰ نقوی نے خصوصی بچوں کے لیے معاون آلات کی تقسیم کے لیے وقف ایک پروجیکٹ کا آغاز کرکے ایک اہم قدم آگے بڑھایا۔ ضرورت مندوں کو وہیل چیئرز، سماعت کے آلات اور سفید چھڑی فراہم کی گئیں، جو ان مستحق افراد کی مدد کے لیے حکومت کے عزم کو ظاہر کرتی ہیں۔تعلیم اور کھیل دونوں میں غیر معمولی کامیابیوں کے اعتراف میں، وزیر اعلیٰ نقوی نے نمایاں خصوصی طلباء کو اچھے تمغے اور تعریفی اسناد عطا کیں۔ تعلیم اور کھیل دونوں میں غیر معمولی کامیابیوں کے اعتراف میں، وزیر اعلیٰ نقوی نے نمایاں خصوصی طلباء کو اچھے تمغے اور تعریفی اسناد عطا کیں۔ انہوں نے ان ہونہار بچوں کی طرف سے تیار کردہ دستکاری، پینٹنگز اور ملبوسات کے اسٹالز کا ذاتی طور پر معائنہ کرنے کے لیے بھی وقت نکالا، ان کی تخلیقی صلاحیتوں اور مہارت کو اجاگر کیا۔ان کی شراکت داری کے لیے اظہار تشکر کے طور پر، وزیر اعلیٰ نقوی نے گلوبل پارٹنرشپ کی نمائندہ انیسہ قبور کو ایک یادگاری شیلڈ پیش کی۔تعلیمی اداروں میں طلبا ء و طالبات کو درپیش ہر قسم کے مسائل پر عام مکالمہ صحت مند سرگرمی ہے۔
بدقسمتی سے، ملک میں بہت سے لوگ ملک میں پیش کیے جانے والے خصوصی تعلیمی پروگراموں سے واقف نہیں ہیں۔ ماہرین تعلیم اور صحت کی دیکھ بھال فراہم کرنے والوں کو خصوصی ضروریات والے بچوں کے لیے پروگراموں سے آگاہ ہونے کی ضرورت ہے۔ چونکہ زیادہ اساتذہ، معالجین اور ماہر نفسیات پاکستان میں مختلف قسم کے خصوصی تعلیمی پروگراموں سے واقف ہیں، وہ والدین کو اندھیرے میں چھوڑنے کے بجائے متبادل آپشنز کا مشورہ دے سکتے ہیں۔ معذور بچوں کو سیکھنے کے مواد اور تربیت تک رسائی حاصل کرنے کا موقع فراہم کرنا ان میں سے بہت سے والدین کے لیے امید کی کرن کا کام کرے گا۔ جس کے نتیجے میں، ان کے اپنے ملک میں مایوسی محسوس کرنے کے بجائے مستقبل میں روزگار اور زیادہ کمائی کے مواقع بڑھیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *